امریکہ کی جانب سے پاکستان پر پابندیوں کی تلوار لٹکنے لگی

پاکستان اور امریکہ کے مابین تعلقات ایک بار پھر سرد مہری کی جانب جانے کے خدشات پیدا ہوگئے ہیں، افغانستان سے امریکی افواج کے انخلا، چین، امریکا تناؤ اور بھارت امریکا معاشی اور دفاعی اتحاد کے تناظر میں امریکا کو پاکستان کی ضرورت کم ہونے کے ساتھ ہی امریکا کی جانب سے ماضی کی طرح ایک بارپھر لاتعلقی بلکہ پابندیاں لگانے کے خدشات پیدا ہوگئے ہیں۔

اس حوالے سے نجی نشریاتی ادارے نے اپنی جاری کردہ رپورٹ می دعوی کیا کہ امریکی انخلا کے بعد اب امریکا کو بھارت جیسے اتحادی کی موجودگی کے باعث پاکستان کی ضرورت بہت کم ہے۔ اس کاایک و اضح اشارہ چائلڈ پریونیشن ایکٹ کے امریکی قانون کے تحت 2021ء کی 15؍ ممالک کی جاری کردہ لسٹ میں پاکستان کی شمولیت ہے۔

اس حوالے سے جاری کردہ رپورٹ میں یہ دعوی کیا گیا ہے کہ اس قانون کے تحت امریکی لسٹ میں شامل ممالک پرامریکا کی فوجی امداد، فوجی تربیت و تعاون کے پروگرام سمیت معاشی اور دیگر پابندیاں عائد کی جاسکتی ہیں جن میں سکیورٹی اور ملٹری ہتھیاروں کی فراہمی بھی شامل ہے۔ تاہم اس خبر کے سامنے آنے کے بعد پاکستانی وزارت خارجہ کی جانب سے سخت ردعمل دیتے ہوئے اس امریکی فہرست میں پاکستان کی شمولیت کے امریکی فیصلے کومسترد کیا گیا ہے

لیکن امریکی فہرست نہ صرف جاری کی جاچکی ہے بلکہ اگلے مالی سال میں امریکی حکومت کو اس فیصلے پر عمل کرنا لازم ہے البتہ اگر امریکی صدر بائیڈن اگر کسی ملک کے لئے خصوصی عارضی استثنیٰ (WAIVER) جاری کردیں تو پابندیاں وقتی طور پر ملتوی ہوسکتی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں