پاکستانی نژاد خاندان کے چار افراد کا قتل پرامن کینیڈا کے دعوں پر سوالیہ نشان

وزیر اعظم، وزیر خارجہ، نمائندہ خصوصی برائے بین الالمزاہب ہم آہنگی سمیت کینڈا میں تعینات پاکستانی ہائی کمشنر کی جانب سے اظہار مذمت اور شفاف تحقیقات کا مطالبہ سامنے آگیا

وزیراعظم عمران خان کا کینیڈا میں پاکستانی نژاد خاندان کے قتل پر اظہار افسوس اور اہم بیان سامنے آگیا انہوں نے کہا کہ لندن اونٹاریو میں پاکستانی نژاد خاندان کے قتل پر انتہائی دکھ ہوا

وزیراعظم نے کہا کہ قتل کا یہ قابل مذمت واقعہ مغربی ممالک میں بڑھتے ہوئے اسلاموفوبیا کو ظاہر کرتا ہے،
بین الاقوامی برادری کو ایک موثر اور جامع حکمت عملی کے تحت اسلاموفوبیا سے نمٹنا ہو گا

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کا کینیڈا میں پاکستانی نڑاد فیملی کے ساتھ پیش آنے والے المناک واقعہ کے حوالے سے اہم بیان

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ واقعہ بروز اتوار رات 8 بجے رونما ہوتا ہے،اہل خانہ کو اطلاع اگلے روز دی جاتی ہے

شاہ محمود قریشی کے مطابق متاثرہ فیملی کے ساتھ پہلا رابطہ ٹورانٹو میں ہمارے قونصل جنرل کا ہوا -فیملی، اس المناک سانحہ کے باعث کرب کا شکار ہے

وزیر خارجہ کے مطابق ہم نے ان کو میتیں پاکستان بھجوانے کی پیشکش کی
٭ متاثرہ فیملی نے وہیں تدفین کرنے کے متعلق آگاہ کیا، تین بے گناہ، بے قصور نسلیں اس واقعہ سے متاثر ہوئی ہیں، پولیس کی تحقیقات کے مطابق اس واقعہ میں اسلاموفوبیا کا عنصر موجود ہے

مخدوم شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ میرے نزدیک یہ دہشت گردی کا واقعہ ہے، ہمارے قونصل جنرل تورانٹو نے بتایا کہ پولیس کا رویہ اطمینان بخش ہے- جو باڈیز ملیں وہ قابلِ شناخت نہیں ابھی تک پوسٹ مارٹم رپورٹ کا انتظار ہو رہا ہے –

وزیر خارجہ نے کہا کہ یہ بہت بڑا المیہ ہے میں بطور وزیر خارجہ پاکستان،کینیڈین وزیر اعظم سے کہوں گا کہ یہ ان کے معاشرے کا امتحان ہے، وہ کینیڈا میں مقیم مسلمانوں کے اعتماد کو بحال کرنے کیلئے اور ان کے تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے اپنا کردار ادا کریں-

وزیر خارجہ نے کہا کہ ہماری آنکھیں اس غم میں نم ہیں- میں کینیڈا میں مقیم پاکستانیوں سے اپیل کروں گا کہ اس متاثرہ خاندان کے ساتھ مل کر اظہارِ یکجہتی کریں، اگر نماز جنازہ میں شرکت کی اجازت ملتی ہے تو فزیکلی شامل ہوں ورنہ غائبانہ نماز جنازہ ادا کریں-

وزیر خارجہ نے کہا کہ ابھی تک ملنے والی اطلاعات کے مطابق، یہ فیزیوتھراپسٹ تھے پڑھے لکھے شخص تھے ان کا پاکستان میں تعلق لاہور سے تھا – جب تک مکمل رپورٹ سامنے نہیں آ جاتی، کچھ بھی حتمی طور پر نہیں کہا جاسکتا

وزیراعظم کے نمائیندہ خصوصی براے مذہبی ہم آہنگی و مشرق وسطیٰ اور چیرمین پاکستان علماکونسل حافظ طاہر محمود اشرفی کا ٹویٹ

کہا کہ کینیڈا میں مسلم فیملی پر حملہ کی شدید مذمت کرتے ہیں، یہ واقعہ کھلی دہشت گردی اور دین اسلام سے ناواقفیت کا شاخسانہ ہے

حافظ طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ مغرب اسلام و فوبیا کا شکارہے ، جس سے ایسے واقعات رونما ہورہے ہیں،پوری دنیا کو اسلام و فوبیا کا مقابلہ کرنے کے لیے متحد ہونے کی ضرورت ہے ،

حافظ طاہر محمود اشرفی نے مزید کہا کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے ہمیشہ اسلام و فوبیا کے خاتمے کی بات کی ہے، وزیر اعظم نے عالمی برادری کو اسلام وفوبیا کے مسلے سے نمٹنے کے لیے ہمیشہ تعاون کی پیشکش کی ہے، کینیڈا کی متاثرہ فیملی کے ساتھ مکمل ہمدردی کا اظہار کرتے ہیں اور امید کرتے ہیں حکومت کینیڈا متاثرہ فیملی کو انصاف کی فراہمی یقینی بناے گی،توقع ہے حکومت کینیڈا آیندہ ایسے واقعات کی روک تھام کے لیے ٹھوس اقدامات کرے گی،

پاکستانی ہائی کمشنر کینیڈا کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ابتدائی رپورٹ کے مطابق صوبہ اونٹاریو کے شہر لندن میں واقعہ اسلاموفوبیا اور دہشتگردی کا نتیجہ ہے ،پاکستانی ہائی کمیشن کا صوبائی اور وفاقی حکومتوں سے واقعہ کی تحقیقات کا مطالبہ جبکہ ٹورنٹو میں پاکستانی قونصل جنرل متاثرہ افراد سے اظہار تعزیت کریں گے،

پاکستانی ہائی کمیشن کینیڈا نے کہا کہ
پاکستانی ہائی کمیشن غمزدہ خاندان کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرے گا

اپنا تبصرہ بھیجیں