اگر دین کا کلچر نہیں پسند تو نمائندگی مت کریں, رابی پیر زادہ کی ملالہ پر تنقید

ملالہ یوسفزئی کا غیر ملکی میگزین کو دیا گیا انٹرویو اور اس میں شادی سے متعلق اپنے خیالات کا اظہار پاکستان میں موضوع بحث بنا ہوا ہے پاکستان میں اس کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے

سابق گلوکارہ رابی پیرازدہ نے بھی ملالہ یوسفزئی پر سخت تنقید کی ہے۔رابی پیرزادہ ٹویٹ میں کہا کہ

“بہن میں نے موسیقی چھوڑ دی ہے۔ مگر آپ کو دیکھ کر نصرت فتح علی خان مرحوم یاد آگئے، “کیا سے کیا ہو گیے دیکھتے دیکھتے”۔

مزید کہا کہ ہم مسلمان گالیاں یا فسق باتیں نہیں کرتے، صرف امید کرتے ہیں اگر دین کا کلچر نہیں پسند تو دین کو ریپریسنٹ مت کریں یعنی دین کی نمائندگی مت کریں، اللہ ہم سب کو ہدایت دے، کوئی مکمل نہیں

دوسری جانب ملالہ یوسف زئی کے والد ضیا الدین یوسف زئی پاکستان میں تنقید کے جاری سیلاب کے جواب میں کہا کہ شادی سے متعلق ان کی بیٹی کے بیان کو انٹرویو کے سیاق و سباق سے ہٹ کر شیئر کیا جا رہا ہے۔ضیا الدین یوسف زئی نے مفتی شہاب الدین پوپلزئی کی جانب سے ٹوئٹر پر کیے جانے والے سوال کے جواب میں کہا کہ میڈیا اور سوشل میڈیا ان کی بیٹی کے بیان کو غلط پیش کر رہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں