وزارت صحت اور ضلعی انتظامیہ اسلام آباد کو تمباکو فری بنانے کے لیے پُرعزم, اہم نظام متعارف کروا دیا

اسلام آباد انتظامیہ کی جانب وزارت صحت کے تمباکو کنٹرول سیل کے تعاون سے آن لائن تمباکو وینڈر رجسٹریشن سسٹم متعارف کروا دیا گیا, نئے سسٹم کے تحت اسلام آباد میں کام کرنے والے تمام تمباکو وینڈر کے لیے رجسٹریشن لازمی قرار دی گئی ہے

ڈی جی تمباکو کنٹرول سیل وزارت صحت ڈاکٹر منہاج السراج نے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا کا یہ واحد اقدام ہے جس میں ہمارے پاس تمباکو سیلرز کا ڈیٹا موجود ہے, کس مارکیٹ میں کتنا تمباکو بیچا جا رہا ہے تمام ڈیٹا موجود ہے

انہوں نے مزید کہا کہ اس حوالے سے قانون سازی ڈرافٹ کی جاچکی ہے, ڈیجیٹل سورسز کی بھی اس حوالے سے اعانت لی جارہی ہے

اس موقع پر ڈائریکٹر ایکسائز اسلام آباد بلال اعظم نے کہا کہ
ہم نے جتنا بھی کام کیا ہے اس میں اضافی فنڈز نہیں لیے گئے, اس سال ہم اپنے ٹارگٹ سے بھی زیادہ ریونیو اکٹھا کر چکے ہیں

بلال اعظم نے کہا کہ ہم نے ٹیکنالوجی کے استعمال سے سروسز کو شہریوں کے لیے آسان بنایا ہے اور کورونا وباء کے دوران بھی تمام تر سروسز کی فراہمی کا سلسلہ ڈور سٹیپ پر جاری رکھا ہے

ڈی سی اسلام آباد حمزہ شفقات نے بھی اس موقع پر تقریب سے خطاب کیا جس میں انہوں نے کہا کہ, اسلام آباد کو تمباکو فری شہر ڈکلئیر کیا گیا ہے, تمباکو کمپنی کی اسلام آباد میں کسی بھی قسم کی تشہیر نظر نہیں آسکتی

انہوں نے مزید کہا کہ تمباکو نوشی کی ہر مرحلے پر حوصلہ شکنی کی جارہی ہے, اس حوالے سے آگاہی مہم کی کمی رہی ہے

ایک سوال کے جواب میں حمزہ شفقات نے کہا کہ سرکاری دفاتر میں جاکر سگریٹ نوشی کو کنٹرول کرنا مشکل کام ہے تاہم اس حوالے سے قانون سازی کی مدد سے مزید کاروائیاں کریں گے

ڈی سی اسلام آباد نے کہا کہ اسلام آباد میں سگریٹ بیچنے والوں کی آئن لائن رجسٹریشن کا عمل شروع کر دیا گیا اور آج سے 18 سال سے کم عمر کو سگریٹ پینے پر جرمانہ ہوگا،

ڈائریکٹر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن بلال اعظم نے مزید کہا کہ کم عمر کو سگریٹ پینے پر ایکسائز ڈیپارٹمنٹ ہزار روپے سے ایک لاکھ تک جرمانہ کرے گا، کھلے سگریٹ فروخت کرنے پر بھی جرمانہ کیا جائے گا، اسکولوں کالجوں کے قریب سگریٹ فروخت کرنے پر مکمل پابندی ہوگی، ایکسائز ڈیپارٹمنٹ کا عملہ تمام قوانین پر سختی سے عمل کروائے گا

اپنا تبصرہ بھیجیں