پاکستان کا بیرونِ مُلک سے آنے والی پروازوں کو 80 فیصد کم کرنے کا فیصلہ

پاکستان کا بیرون ملک سے آنے والی پروازوں کو 80 فیصد کم کرنے کا فیصلہ سامنے آگیا اس حوالے سے این سی او سی نے سفری ایڈوائزری جاری کر دی ہے جس کے مطابق فضائی سفر محدود رکھنے کی پابندیاں 5 سے 20 مئی تک نافذ العمل رہیں گی جبکہ ایئر ٹریفک کو 80 فیصد تک کم کر دیا ہے

جاری کی گئی نئی گائیڈ لائینز کے مطابق موجودہ پابندیوں پہ 18 مئی کے اجلاس میں دوبارہ جائزہ لیا جائے گا۔ تمام مسافروں کو 72 گھنٹے قبل پی سی آر منفی ٹیسٹ رپورٹ دکھانا لازم ہوگا۔

این سی او سی کی جانب سے مزید کہا گیا ہے کہ پاکستان آمد پر ایئر پورٹ پر دوبارہ ریپڈ اینٹیجن ٹیسٹ کیا جائے گا , ٹیسٹ نیگیٹو ہونے پر دس دن گھر میں قرنطینہ کرنا ہوگا

سفری گائیڈ لائینز کے مطابق کورونا ٹیسٹ مثبت آنے والے مسافروں کو 10 دنوں کیلئے سیلف پیڈ سہولت کے تحت قرنطینہ سینٹر منتقل کئے جائیں گے۔ مثبت مریض کا قرنطینہ کے 8ویں روز دوبارہ کورونا ٹیسٹ کیا جائے گا۔

این سی او سی کی جاری کردہ ہدایات کے مطابق ٹیسٹ منفی آنے کی صورت میں مسافر گھر جا سکے گا۔ ٹیسٹ مثبت آنے کی صورت میں صحت حکام کی ہدایات پہ عمل کیا جائے گا۔پاکستان آنے والی پروازوں کو صرف 20 فیصد تک محدود کر دیا گیا۔ جبکہ کیٹیگری سی ممالک کی فہرست میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔

ہدایات میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی پاسپورٹ ہولڈرز کو پاکستان آنے کی اجازت ہو گی۔ اپاکستان آنے والے تمام مسافروں کیلئے پاس ٹریک ایپ پہ رجسٹریشن لازمی ہو گی۔ ڈی پورٹ ہونے والے افراد کو پاس ٹرئک ایپ پر رجسٹریشن سے استثی ہو گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں