کوئٹہ کے سرینا چوک پر ہوٹل کی پارکنگ میں دھماکا، 4 افراد جاں بحق

صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ کے زرغون روڈ سرینا چوک پر نجی ہوٹل کی پارکنگ میں دھماکے کے نتیجے میں 4 افراد جاں بحق ہوگئے۔

پولیس کے مطابق کوئٹہ کے زرغون روڈ پر مقامی ہوٹل کی پارکنگ میں زورداردھماکا ہوا جس کی آواز دور دور تک سنائی دی۔

دھماکے سے ہوٹل کی پارکنگ میں کھڑی متعدد گاڑیوں میں اگ لگ گئی جبکہ دھماکے میں 4 افراد جاں بحق  اور 11 زخمی ہوئے۔

لاشوں اور زخمیوں کو سول اسپتال منتقل کر دیا گیا اور اسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی جبکہ اسپتال ذرائع کے مطابق زخمیوں میں سے 2 کی حالت تشویشناک ہے۔

جاں بحق افراد میں ہوٹل کا سیکیورٹی گارڈ اور ایک پولیس اہلکار بھی شامل ہے جبکہ دھماکے میں 2 اسسٹنٹ کمشنرز بھی زخمی ہوئے۔

ابتدائی تحقیقات  کے مطابق دھماکا خیز مواد گاڑی میں نصب کیا گیا تھا۔

پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں نے دھماکے کے مقام کو گھیرے میں لے لیا ہے جبکہ جائے وقوع سے شواہد اکٹھے کرلیے گئے ہیں۔

دھماکا مقامی ہوٹل کی پارکنگ میں ہوا، آئی جی بلوچستان کی تصدیق

انسپکٹر جنرل (آئی جی) پولیس بلوچستان  محمد طاہر رائے کے مطابق دھماکا مقامی ہوٹل کی پارکنگ میں ہوا، سی ٹی ڈی نے دھماکے کی جگہ کو سیل کردیا ہے اور دھماکے سے نقصانات کا جائزہ لیا جارہا ہے۔

وفاقی وزارت داخلہ حکومت بلوچستان کے ساتھ قریبی رابطے میں ہے، فواد چوہدری

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھاکہ وفاقی وزارت داخلہ حکومت بلوچستان کے ساتھ قریبی رابطے میں ہے اور ابتدائی تحقیقات کی جارہی ہیں جیسے ہی دھماکے کی نوعیت اور نقصانات کا تعین ہوگا حکومت بیان جاری کرے گی۔

ترجمان بلوچستان حکومت کی جانب سے دھماکا دہشت گرد حملہ قرار 

ترجمان بلوچستان حکومت لیاقت شاہوانی نے دھماکے کو دہشت گرد حملہ قرار دیا اور کہا کہ یہ دھماکا دہشتگرد حملہ ہے جس کی تمام پہلوؤں سے تحقیقات کی جارہی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں