تحریک لبیک کے سربراہ خادم حسین رضوی کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی

مذہبی و سیاسی جماعت تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ خادم حسین رضوی کی نماز جنازہ لاہور مینار پاکستان کے گراؤنڈ میں لاکھوں افراد کی موجودگی میں ادا کر دی گئی

تحریک لبیک پاکستان کے بانی جمعرات کو 55 سال کی عمر میں لاہور میں وفات پا گئے تھے۔

منٹو پارک (جو اب گریٹر اقبال پارک کہلایا جاتا ہے) میں ان کی نمازِ جنازہ کے موقع پر پاکستان کے وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق قادری اور دیگر مذہبی و سیاسی رہنماؤں سمیت ہزاروں افراد نے شرکت کی۔

نمازِ جنازہ سے قبل اعلان کیا گیا کہ جماعت کی مجلس شوریٰ نے خادم رضوی کے بڑے صاحبزادے سعد حسین رضوی کو ان کا جانشین مقرر کیا ہے۔ سعد رضوی نے والد کی نمازِ جنازہ پڑھائی اور شرکا سے ان کا مشن جاری رکھنے کا حلف لیا۔

اس سے پہلے لاہور کے گریٹراقبال پارک میں مینار پاکستان کے قریب وسیع و عریض گراؤنڈ میں ادا کی جانے والی خادم حسین رضوی کی نماز جنازہ میں ملک کے مختلف حصوں سے آنے والے لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ اس موقعے پر سیکورٹی کے خصوصی حٖفاظتی انتظامات کیے گئے تھے۔

گاڑیوں اور موٹر سائکلوں پر سوار لوگوں کے علاوہ پیدل چلنے والے لوگوں کی بڑی تعداد بھی میت کے ساتھ چلنے والے قافلے میں شریک رہی، تین ایمبولینسوں کے جلو میں چلنے والا یہ قافلہ سمن آباد، چوبرجی، ایم اے او کالج اور لوئر مال سے ہوتا ہوا چند کلومیٹر کا فاصلہ چار گھنٹوں میں طے کرکے مینار پاکستان پہنچا۔

اس موقع پر شہر میں سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے جبکہ موبائل فون سروسز مختصر دورانیے کے لیے معطل رہیں اور شہر کے اس حصے میں کاروبار بند رہا۔

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان اور آرمی چیف قمر جاوید باجوہ نے علامہ خادم حسین کی موت پر افسوس کا اظہار کیا

میٹرو بس کو بھی شاہدرہ سے ایم اے او کالج تک بند رکھا گیا۔ جلوس کے راستوں اور مینار پاکستان کے اطراف میں واقع مارکیٹیں بھی بند رہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں