ناگورنوکاراباخ کی فتح میں پاکستان کا کردار مثالی ہے : سفیر آذربائیجان

اسلام آباد : آذر بائیجان کے سفیر نے اسلام آباد میں ایک سیمنار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ناگورنو کاراباخ کی فتح میں پاکستان کا کردار مثالی ہے جو پاکستان اور آذربائیجان کے درمیان تعلقات کو مضبوط بنانے کا باعث بنے گا ۔

میثاق ریسرچ انسٹیٹیوٹ کے زیر اہتمام اسلام آباد پریس کلب میں ناگورنو کاراباخ کی لڑائی اور اس کے سیاسی حل کے بارے میں ایک سیمینار منعقد ہوا جس آذربائیجان کے سفیرعلی علیزادہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آزربائجان نے یہ جنگ ہمارے شہیدوں کی قربانیوں کی وجہ سے جیتی ہے کاراباخ آذربائیجان کی ایک تاریخی زمین ہے۔

اس سیمینار میں اسلامی اور دیگر ممالک کے سفیروں اور سفارتکاروں ریٹائرجرنیلوں ، برگیڈئیرز ، دانشوروں اور دفاعی تجزیہ کاروں نے بھی شرکت کی ۔ جبکہ محمد عبداللہ گل ڈائکٹر میثاق ریسرچ انسٹیٹیوٹ نے موضوع کا تعارف کروایا اس کے علاوہ برگیڈئیر ریٹائرڈ عبدالرحمان بلال ستارہ جرات نے موضوع کا احاطہ کیا جبکہ سینٹر طلحہ محمود نے تقریب میں رنگ بھرے ۔

علیزادہ نے بتایا کہ انیسیویں صدی سے قبل کاراباخ میں آرمینینز کا وجود تک نہیں تھا ہم نے ہمیشہ آرمینین شہریوں کے لیے اپنے گھروں کو کھولا لیکن وہ ہمارے خلاف بطور ہتھیار استعمال ہوئے انھوں نے مزیدکہا کہ یہ تنازعہ آزربائیجان کو دباؤ میں رکھنے کے لیے ہی پیدا کیا گیا تھا۔ جب بھی آرمینیا میں حکومت کی تبدیلی ہوئی ان کی جانب سے کاراباخ پر قبضہ برقرار رکھنے کی کوشش کی جاتی رہی اگر ایشو بس کاراباخ میں ہے تھا تو آرمینیا کی جانب سے دیگر 7 مقامات پر قبضہ کرنے کی کوشش کی گئی۔

انھوں نے کہا کہ آرمینیا کے وزیراعظم کی جانب سے کاراباخ کو آرمینیا کا حصہ کہنا مزاکرات میں رکاوٹ کا باعث بنا جبکہ رواں سال آزربائیجان میں آرمینیا کی جانب سے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی میں معصوم شہریوں کو نشانہ بنایا گیا تو شہریوں کی ہلاکتوں کے بعد آزربائجان کو آرمینیا کے خلاف کاروائی پر مجبور کیا گیا۔

آذربائیجان کے سفیر بتایا کہ آرمینیا کی جانب سے سرحد کے دونوں اطراف کاروائیاں کی گئیں اور آرمینین افواج کی جانب سے آزربائیجان کی شہری آبادیوں کو بھی نشانہ بنایا گیا ،آرمینیا کی جانب سے جنیوا کنوینشن اور بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کی گئی جنگ میں آرمینیا کی جانب سے دوران جنگ بھاری ہتھیاروں کا استعمال بھی کیا جاتا رہا۔

آرمینیا کی جانب سے اس تنازعہ کو مزہبی رنگ دینے کی بھرپور کوشش کی جاتی رہی ،آرمنییا کی جانب سے دیگر ممالک کو بھی اس جنگ میں دھکیلنے کی کوشش کی گئی ،کاراباخ آزربائیجان کا اٹوٹ انگ ہے

امن معاہدے کے مطابق آرمینیا کی جانب سے قابض 7 علاقوں میں سے 3 کو آئندہ 15 روز میں خالی کیا جائے گا اس ساری صورتحال میں آزربائیجان کو ہمیشہ پاکستان کی حمایت مِلی ہے

علیزادہ مغربی ممالک کی جانب سے آرمینیا کو مالی امداد فراہم کرنا افسوسناک ہے ،آزبائیجان کی عوام اس ساری صورتحال میں ساتھ کھڑا رہنے پر پاکستانی عوام کی شکرگزار ہے ، پاکستان کے وزیر اعظم کی جانب سے ٹویٹس میں آرمینیا کے اقدامات کی مزمت کی جاتی رہی ، سینیٹ اور قومی اسمبلی میں آرمینیا کے حق میں پیش کی گئی مزمتی قرارداد قابلِ ستائش ہے پاکستانی عوام کی جانب سے حمایت پر ہم پوری قوم کے شکرگزار ہیں پاکستانی قوم کی جانب سے آزربائیجان کے لیے حمایت قابلِ تعریف ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں