آرمینی فوج کے تازہ حملوں سے متعدد آذری شہری شہید

آرمینی فوج  نے آذری شہر گینجے اور مینگے چیور پر میزائل حملے کیے۔ ابتدائی معلومات کے مطابق ان حملوں میں 12 شہری ہلاک ہو گئے۔

میزائل لگنے والے علاقے میں بھاری تعداد میں  شہری ملبے تلے دب گئے، جن کے بچاؤ کے لیے امدادی کاروائیاں جاری ہیں۔

نائب صدر حکمت حاجی یف نے اپنی ٹویٹ میں لکھا ہے کہ آرمینیا نے نئے میزائل نظام کو فرنٹ لائن پر نصب کرتے ہوئے  سول رہائشی علاقوں کو نشانہ بنایا ہے۔

گینجے پر حملے سے 20 سے زائد مکانات کے منہدم ہونے کا ذکر کرنے والے حاجی یف نے بتایا کہ یہ حملے آرمینی حکومت کی دہشت گرد پالیسیوں کے واضح مظہر ہیں۔

ان حملوں میں ایک میزائل کے کثیر المنزلہ عمارت پر آن لگنے سے 12 آذری شہری اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں تو 40 سے زائد زخمی ہیں۔

حاجی یف نے مزید بتایا کہ اسکڈ قسم کے ’البروس‘ بالسٹک میزائلوں کے ذریعے  شہریوں  پر حملے ایریوان انتظامیہ کی بد اخلاقی اور دیوانگی کے عکاس ہیں۔

انہوں نے اس جانب توجہ مبذول کرائی ہے کہ شہریوں پر حملے جنگی میدان میں شکست سے دو چار ہونے والی آرمینی انتظامیہ کی کمزوری کا اشارہ دیتے ہیں اور یہ حملے قصدی طور پر کیے گئے  ہیں۔

اطلاع کے مطابق مینگے چیور شہر پر داغے گئے میزائلوں کو آذری  فضائی نظام نے  ناکارہ بنا دیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں