دفعہ 370 کو واپس لینے کیلئے پہلی بار میٹنگ

بھارتی کشمیر کے تمام ہند نواز سیاسی رہنماوں کی، گزشتہ برس دفعہ 370 کے خاتمے کے بعد، پہلی بار میٹنگ ہورہی ہے، وہ ریاستی درجہ اور آئینی دفعہ بحال کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں تاہم مبصرین کے مطابق ان میں حکمت علی کی کمی ہے۔

بھارت کے زیر انتظام کشمیر کے ایک درجن سے بھی زیادہ بھارت نواز رہنماؤں کی 15 اکتوبر کی شام کو میٹنگ ہونے والی ہے جس میں وہ یہ طے کریں گے کہ کشمیر کا ریاستی درجہ دوبارہ بحال کرنے اور دفعہ 370 کو واپس لینے کے لیے کیا سیاسی حکمت عملی اپنائی جائے۔ گزشتہ برس اگست میں مودی حکومت نے کشمیر کو حاصل کرنے کے خصوصی اختیارات ختم کر دیے تھے اور تمام بڑے رہنماؤں کو قید کر دیا تھا۔

واضح رہے کہ گزشتہ برس چار اگست کو مودی حکومت کی کارروائی سے عین قبل ان تمام سیاسی جماعتوں نے گوپکار روڈ پر فاروق عبداللہ کے گھر پر ایک میٹنگ کی تھی اور سب نے کشمیر کی شناخت، اس کی خود مختاری اور اس کے کاز کے لیے ایک قرارداد پر اتفاق کرتے ہوئے ان مسائل پر متحد ہونے کا عہد کیا تھا۔ اس میٹنگ میں مذکورہ قراداد کے تمام شرکا کے موجود ہونے کی توقع ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں