کوئی چاہے کتنا ہی طاقتور ہو، جرم کی معافی نہیں ملے گی: وزیراعظم

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ مافیازکےخلاف طویل جدوجہدکی ہے،موقف سےپیچھے نہیں ہٹوں گا، کوئی چاہےکتناہی طاقتورکیوں نہ ہو،جرم کی معافی نہیں ملے گی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی کابینہ کےخصوصی اجلاس کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ، وزیراعظم اورکابینہ ارکان نے شوگرکمیشن کےسربراہ واجد ضیاکوشاباشی دیتے ہوئے کہا
آپ نےتحقیقات کےدوران بہترین کام کیا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پوری تحقیقاتی رپورٹ میں کوئی ابہام نہیں، مافیا کے خلاف جنگ جاری رکھیں گے، مافیازکےخلاف طویل جدوجہدکی ہے،موقف سےپیچھے نہیں ہٹوں گا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت میں آکرپتاچلاملک مافیازکےرحم و کرم پرچھوڑدیاگیا، جس طرف دیکھو مافیاز سرگرم ہیں، کوئی چاہےکتناہی طاقتورکیوں نہ ہو،جرم کی معافی نہیں ملےگی۔

انھوں نے کہا کہ ملک کوبری طریقےسےلوٹا گیا،مگراب قانون اپناراستہ اختیار کرے گا ، خوشی ہےپوری کابینہ کرپشن کے خلاف جنگ میں میرے ساتھ ہے، میں وہی کام کر رہا ہوں جو عوام کیلئے بہتر ہے۔

خیل رہے وزیراعظم نے شوگر انکوائری کمیشن کی رپورٹ پبلک کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور وفاقی کابینہ نے رپورٹ پبلک کرنے کی منظوری دے دی تھی، اجلاس میں فیصلہ کیا گیا تھا کہ 29 ارب کےگھپلےہوئے،ساری کمپنیوں کا آڈٹ اورپیسہ ریکورہوگا، کرمنل پروسیڈنگ ہوں گی اور ایف آئی اے تحقیقات جاری رکھے گا۔

ذرائع کے مطابق شوگرانکوائری کمیشن کی رپورٹ میں جہانگیرترین،خسروبختیارکےبھائی،شہبازشریف اور اومنی گروپ کو ذمہ دارقرار دیا گیا ہے۔

وزیراعظم کےحکم پرپبلک کی گئی رپورٹ میں بتایا گیا کہ جہانگیرترین کی ملزنےبھی بہتی گنگامیں ہاتھ دھوئے، خریداروں اورکسانوں کوبھی لوٹا،ٹیکس چوری بھی کی، شہباز شریف خاندان کی ملیں بھی لوٹ ماراورفراڈ میں پیش پیش رہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ سندھ میں اومنی گروپ کونوازنےکےلیےخصوصی سبسڈی دی گئی، شوگرمافیا اپنےمفادکےلیےحکومتوں کوبلیک میل کرتی رہی،کسانوں کو سپورٹ پرائس سےبھی کم رقم دی گئی جبکہ لاگت بڑھاچڑھاکربیان کرکےمنافع خوری کی گئی۔

وزیراعظم کےمعاون خصوصی شہزاد اکبرکا کہنا تھا کہ کاروبارکرنے والا سیاست میں آئے گا تو کاروبارہی کرے گا، وزیراعظم جو کہتےتھے کمیشن نے تصدیق کردی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں