شادی سے ایک دن پہلے لڑکیوں کے ذہن میں کیا چلتے ہیں یہ سوال

Spread the love

شادی ایک انمول رشتہ ہے۔ اس بندھن میں نہ صرف دو لوگ جڑتے ہیں بلکہ دو خاندان یعنی فیملی کا بھی ملن ہوتا ہے۔ شادی کے رشتے میں بندھنے سے پہلے دولہا۔دلہن کے من میں کئی طرح کے سوال اٹھنے لگتے ہیں۔ ان کے من میں اس نئے رشتے کو لیکر ایک عجیب سا ڈر بھی ہوتا ہے۔ ایک نئے کنبے(لوگوں) کے ساتھ رشتہ جوڑنا ہوتا ہے۔

ایسے میں شادی سے ایک رات پہلے کڑکیوں کے من میں کئی سوال امڈنے لگتے ہیں۔ اپنے سوال لئے وہ اپنی شادی شدہ دوستوں سے بات کرتی ہیں تو کبھی اپنی ہی کسی الجھی باتوں میں گم ہوجاتی ہیں۔ اگر آپ کو لگتا ہے کہ شادی سے ایک دن پہلے وہ اپنی شادی یا پھر ہنی مون کے بارے میں سوچتی ہوں گی تو آپ غلط سوچ رہے ہیں۔ آیئے جانتے ہیں آخر اپنی شادی سے ایک رات پہلے لڑکیاں کیا سوچتی ہیں؟ آخر کیا چلتا ہے ان کے من میں۔۔

لڑکیاں خواہ کتنی ہی تاخیر سے شادی کیوں نہ کر رہی ہوں، لیکن شادی سے پہلی رات یہی سوچتی ہیں کہ کہیں اس نے فیصلہ لینے میں جلد بازی تو نہیں کردی ۔ جلد بازی میں لیا گیا یہ فیصلہ کہیں زندگی میں اندھیرا نہ بھردے ۔ انہیں یہ بھی لگتا ہے کہ کیا وہ ازدواجی زندگی کی ذمہ داریوں کو اٹھا پائے گی ۔ وہ تھوڑا اور وقت رک جاتی تو شاید شادی کیلئے اس سے اچھا لڑکا مل جاتا ۔

لڑکیاں کئی مرتبہ اپنے سسرال کو لے کر بھی تذبذب میں رہتی ہیں ۔ ان کے ذہن میں یہ سوال رہتا ہے کہ جتنا پیار انہیں اپنے مائیکے میں مل رہا ہے ، کیا سسرال میں بھی مل پائے گا ۔ کیا وہ ہمیشہ کی طرح اپنی آزادی والی زندگی انجوائے کر پائے گی ۔

لڑکیوں کو شادی کی ایک رات پہلے یہ خیال بھی ضرور آتا ہے کہ شادی کے بعد شوہر کے ساتھ پہلی رات کو کیا ہوگا۔ اگر وہ پہلے ہی دن شوہر سے کہیں گی کہ وہ ابھی ٹھیک یعنی کمفرٹ محسوس نہیں کر رہی ہیں تو کہیں ان کے شوہر کو یہ نہ لگنے لگے کہ وہ ان سے پیار نہیں کری۔

پیار میں شادی کی تو پیار کے رشتے کو شادی میں تبدیل کرنا آسان نہیں ہوتا ہے ، لیکن جب بات ہو ارینج میرج کی تو لوگوں کے ذہن میں عجیب سا ڈر اور غیر یقینی رہتی ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ شادی کا فیصلہ لینا ان کیلئے زندگی کا سب سے مشکل کام ہوتا ہے ۔ لڑکیوں کے ساتھ ایسا زیادہ ہوتا ہے کیونکہ شادی کے بعد انہیں ایک انجانے گھر میں اجنبی شخص اور فیملی کے ساتھ پوری زندگی گزارنی ہوتی ہے ۔

ایسے میں لڑکیاں شادی کی کئی تجاویز کو صرف اپنے ڈر کی وجہ سے ٹھکرا دیتی ہیں اور کئی مرتبہ اپنے شادی شدہ دوستوں کے ذریعہ اپنے خدشات کا حل تلاش کرنے کی کوشش کرتی ہیں ۔ یہاں تک کہ شادی کی ایک رات پہلے تک ان کے ذہن میں کئی طرح کے سوالات اور خدشات پیدا ہوتے ہیں ۔

لڑکیاں شروع سے ہی اپنے خواب کے راجکمار کی تلاش میں رہتی ہیں ۔ شادی سے کچھ وقت پہلے ان کے ذہن میں یہی بات چل رہی ہوتی ہے کہ کیا ان کا ہونے والا ہم سفر ان کیلئے پرفیکٹ ہے ۔ کیا وہ اس کے ساتھ پوری زندگی ہنسی اور خوشی کے ساتھ گزار پائے گی ۔ وہ سوچتی ہیں کہ کیا لڑکا ان کے نخرے برداشت کرتے ہوئے زندگی بھر ان کا ساتھ دے پائے گا

اپنا تبصرہ بھیجیں