فوج سے مل کر سرحدوں کو محفوظ بنائیں گے: فردوس عاشق اعوان

Spread the love

معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ اسمگلنگ کی روک تھام کے لیے منعقدہ اجلاس میں فیصلہ ہوا ہے کہ ایران اور افغانستان کے ساتھ سرحدی چوکیوں کو مربوط نظام سے منسلک کیا جائے گا، فوج سے مل کر سرحدوں کو محفوظ بنائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق فردوس عاشق اعوان نے وزیر اعظم کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس کے بعد نیوز کانفرنس میں کہا کہ خیبر پختون خوا کے قبائلی اضلاع میں سرحدی چوکیوں کو بہتر بنایا جائے گا، مغربی سرحدی علاقوں میں قائم چوکیوں کو جدید نظام سے منسلک کیا جا رہا ہے۔

انھوں نے کہا اسمگلنگ سے قومی خزانے کو ہر سال اربوں روپے کا نقصان ہو رہا ہے، 105 ارب کی اسمگلنگ صرف ڈیزل کی ہو رہی ہے، اس لیے افواج پاکستان کی مدد سے اپنے بارڈرز کو محفوظ بنانے جا رہے ہیں، سرحدی چوکیوں پر پہلے مختلف اداروں کے اہل کار تعینات تھے، اب انھیں مربوط نظام میں منسلک کر دیا جائے گا۔

فردوس عاشق نے کہا کہ سرحدی علاقوں میں غیر قانونی تجارت میں ملوث افراد کو متبادل روزگار فراہم کیا جائے گا، ٹیکس فری اقتصادی زونز فعال کیے جا رہے ہیں، نوجوانوں کو مختلف ہنر سکھائے جائیں گے، شمسی توانائی کے ذریعے بجلی فراہم کی جائے گی، افواج کے ساتھ مل کر اسمگلنگ کے خلاف جامع حکمت عملی پر عمل درآمد ہوگا۔

معاون خصوصی نے کہا سارا دن مولانا فضل الرحمان کا حسین چہرہ ہر چینل پر دکھایا جا رہا ہے، پھر بھی انھیں شکایت ہے، وہ پتا نہیں کون سے انداز میں چاہتے ہیں کہ دکھایا جائے، جو دستیاب چہرہ ہے وہ تو دکھایا جا رہا ہے، میڈیا سے بھی گذارش ہے ہیرو کو زیرو نہ بنائے۔

انھوں نے مزید کہا نیشنل ایکشن پلان کے تحت مسلح جتھے بنانا خلاف قانون ہے، جہاں تشدد اور نفرت پر مبنی بیانیہ ملوث ہوگا تو قانون حرکت میں آئے گا، پاکستان کو اس وقت امن اور سیاسی استحکام کی سب سے زیادہ ضرورت ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں